January 2012| جنوری 2012
 

ہو ٚ تمت ٹنگ دۅہ


ڈاکٹر گلشن مجید، کشمیر یونیورسٹی

 

شَمہ بژِھہ ہندِس بر ا ندس تلہ کنہِ

ژھا یہ ۂلِس کُن

تچھہِ بچھِہ پھوٚ جمژ ہی تھر

منگۍ منگۍ

ا و ٚ گرے تھو ٚ گرے ، آوسیومت اکھ تا پہ ٹیوٚ کا

پیو ٚو

ژھۅٹہ ڈیرس پیٹھ

شمہ بژِھہ بِییہ پریڈ ییہ اڈ پاکۍ تریلن ہنز بۅے

ا وٚ نگجہِ ٹینڈٮن ما چُھر لاریوس

نظرِ ہندِس ٲنتھس ۔ ٹھَرِ

پھپھسیمتۍ و ا نگن

(وۅ نۍ چھا تِم با زر

تِم گراکھ

ژا رَ و کتہِ کمہِ و ا نہ ؟ کیا ؟)

شَمہ بژِھہ اَ ندہ وَندہ سو رُ ے گندھکھ وٲنِس منز ڈنگہ دِتھ ہِیوٗ باسیو ٚ و

سریہہ لد گۅپھِہ

کا نہہ گاش نہ تَھو

(پھیشل پد ٮو کوٚ ت کوٚ ت و اتَو )

بَہہ ہتۍ شہہ

(ہتہ زنگُل رُمس رُمس تیلان

لینبہِ منز ۔ گییہ گُرنِس ژھاے تہ تنبلِتھ ا وٗرۍ شر یپوو

شمہ بژِھہ پیوٚ و ا ندہ وَندہ تا پھ لبن ہیو ٚر ہیوٚ ر تا ں

با تھ رو مُک نلکہ چھہ بۅ ن وا لُن

سر کارۍ نلکس گژھہِ پیچ لاگُن

نَتہ کیج لاگنۍ

کژھہ بۅ ے پا نَے تَتہِ سوٗر گلَن

اَندہ وندہ پر زلی ییلہ من ژ یہ پژی

سسرِ زمینے دِیی بِیٲ لِس پَھہہ

شمہ بژھ کھژ ٲدی دان لِوِتھ

کچھہِ ا وٚ درُے وولُن رَزِ پیٹھہ بۅن

وَ ہرووُن پان

نَرِ کھۅ نہ وَٹھ تا مَتھ با سییس زنگہ

پَشکہِ شیہلہِ پیٹھہ تاپس تام

ا ٚ وٚنگجہِ ٹینڈٮن بِرس بِرس کرونۍ ہٮڈر لگِس

کوٚ ٹھۍ سینس کُن دِتھ زور ہ وچن

( وُسواسۍ ہِش )

نیرِتھ آیس راتچ کہلَتھ

بٮڈ رومچہ اَڈوژھہِ دارِ نٮبر

شمہ بژِھہ ہنزِ پچہ برنہِ اندر

ا کھ پیاول ہو نۍ