January 2012| جنوری 2012
 

شہناز رشید تہ طرز غالب


ڈاکٹر نذیر آزاد، سرینگر

 

پنن شاعرانہ بجر بیان کرُن، یتھ فارسی تہ اردوہس منز تعلی ونان چھہِ، چھہ سانہ شعری روایتک اکھ اہم حصہ۔ امہ ستٍۍ چھہ نہ صرف شاعرہ سندِ تصّورِ شعرک پے لگان بلکہ چھہ سہ امہ کہ ذریعہ پننہ ادبی روایژ ہندس کُنہِ لہجس یا طرزس سٍتۍ پنن تعلق تہِ ظاہر کران۔ میر تقی میرس سٍتۍ چھہ کٲتہو شاعرو تہندِ طرزہ کہ حوالہ تعلق ظاہر کوٚرمت تہ یتھہ کنۍ چھکھ میرہ سند بجر بیان کرنس سٍتۍ پنن پان تہِ مۅلہ نوومت۔ یہوے حال چھہ رسول میرس سٍتۍ تہِ کاشریو شاعرو روا تھوومت۔مثالہ دنچ ضرورت چھٮہ نہ تکیازِ رسول میرس پٮٹھ لیکھنہ آمتٮن مضمونن منز چھہِ مہجورہ سندِ پٮٹھہ رسا جاودانی یس تام یتھۍ شعر یسلہ پاٹھۍ دنہ آمتۍ ۔ حالانکہ تنقیدک تقاضہ چھہ یہ زِ مہجور تہ باقی شاعر ن ہنزِ شاعری منز گژھۍ رسول میرنہِ شاعری ہندۍ عناصر تلاش کرنہ ینۍ ۔ مگر تمہِ برونہہ چھہ یہ ضروری زِ رسول میرنۍ تم شعری خواص گژھن وچھنہ ینۍ یمو سہ سانہ شعری روایتک اہم پڑاو بنوومت چھہ۔چنانچہ اردو زبانۍ منز پنن پان میرہ سند وارث ثابت کرنہ خاطرہ کرۍ شاعرو کبھو ،کسو تہ ٹک ہوۍ الفاظ استعمال یا زیادہ کھۅتہ زیادہ ووٹُکھ پننس تخلصس سٍتۍ میر جی یک "جی" لاحقہ۔ یا اگر زیادے نزدیک گژھنچ کوشش کٔرکھ تیلہ گنڈِکھ ودنکۍ تہ رونکۍ مضمون۔کاشر س رسول میرسند وارث بننہ خاطرہ تہِ کٔر نہ سانیو شاعروکانہہ سنجیدہ کوشش۔ زیادہ کھۅتہ زیادہ رلووکھ میرہ سنزِ شاعری ہندٮن دوپستانن سٍتۍ پننہ شاعری ہند سپستان تہ دراے یۅہے ہوسناکی ہند شربت مۅلہ ناونہِ وانہ پتہ وانہ ۔ نہ ہیکۍ تم رسول میرن شاعرانہ مقام بدِ کٔڈتھ تہ نہ ہیکۍ تمہِ طرزِ اظہارہ نِشہ کانہہ فایدہ تُلِتھ یمیک آگر سۅ فارسی تہ اردو روایت چھٮہ، یمیک رسول میر اہم پڑاو چھہ۔

خیر یہ آیہ مطلعہ ہسے منز سخن گسترانہ کتھ۔مدعا چھہ یہ زِ نٔوس شاعرہ سند کانسہِ پرٲنس شاعرس خراج عقیدت پیش کرُن چھہ دراصل تتھ طرزس سٍتۍ پنن شاعرانہ اظہار لرِ تھاوُن یُس امس پرٲنس شاعرہ سند مخصوص طرزچھہ ۔شہناز رشید ن تہِ چھہ پننس اکس شعرس منز یژھی تعلی سٍتۍ پنن شعری تعلق غالبس سٍتۍ ظاہر کوٚرمت۔شعر چھہ ۔

" جی خوش ہوا ہے راہ کو پُر خار دیکھ کر " بس غالبن
یہ مصر ہ پٔرتھ پرۍ زِ میانۍ شعر

یمہ برونہہ زِ اسۍ وچھو زِ غالبس تہ شہنازس درمیان کُس شعری رشتہ تہ ہم آہنگی چھٮہ یہ وچھن چھہ ضروری زِ شہنازن کتھ بنیادس پٮٹھ چھٮہ پننۍ شاعری غالبہ سنزِ روایژ سٍتۍ رلٲومژ۔غالبہ سندس شعرس منز چھٮہ مشکل پسندی بجرک وجہ ماننہ آمژ تہ شہنازنہِ مطابق چھٮہ تہنز شاعری مشکل پسندی ہندس زمرس منز یوان۔ چناچہ پرٲنس تہ نٔوس شاعرس درمیان چھہ اتباع برونہہ، شاعرتہ پرن والۍ سند رشتہ آسان۔ ییلہ نوۍ شاعرن کانسہِ پرٲنس شاعرہ سند کلامہ تنقیدی نظرو وچھمت آسہِ ادہ ہیکہ سہ تمہ تصورِ شعرچ نشاندہی کٔرتھ یُس تہندِخاطرہ راہبر تہ رہنما بنہِ۔چونکہ شاعرہ سند تہ قاری سندرشتہ چھہ محمد حسن عسکری ین یونگہ (Yung) سند حوالہ دِتھ ویژھنوومت۔یونگ چھہ ونان زِ دۅن بٲژن (میاں بیوی) منز چھہ اکھ (container)تہ بیاکھ (contained) ۔ گۅڈنکۍ سنز شخصیت چھٮہ تیژ پیچیدہ آسان زِ اتھ منز دوٚیمس شخصہ سند مدغم گژھنہ باوجود چھہِ اتھ کینہہ خانہ توتہِ خالی روزان۔مکمل آسودگی چھہ یمن خانن ہند پُرنہ یُن ضروری ۔اوہ مۅکھہ چھہ اکس پھٲلُن تہ اکس مۅژن پٮوان۔ یۅہے تعلق چھہ شاعرس تہ پرن وٲلس درمیان۔مگر میانہ خیالہ چھٮہ نہ شاعرس بذاتِ خۅد مۅژنچ ضرورت بلکہ چھٮہ ضرورت یمہ کتھہِ ہنز زِ قاری پھٲلاوِ پننس ذہنس تتھ حدس تام یُتھ سہ شاعرہ سندٮن پیچیدہ تجربن تہ تہندس اسلوبس کۅم ہیکہِ کٔرتھ۔ ییلہِ دۅن شاعرن درمیان گۅڈہ یہ رشتہ پیدہ سپدِتہ دوٚیم کرِ گۅڈنکس ذہنی طور احاطہ ادہ ہیکہِ دوٚیم گۅڈنکۍ سندس اسلوبس یا طرزس پاننٲوتھ۔ وۅنۍ اگر دوٚیمہِ سند ذہنی آب و ہوا اتھ غیر موافق آسہِ تیلہ روزِ یہ تقلید یا اتباع کینژن لفظن ہندس استعمالس تامے محدود ۔سوال چھہ یہ پیدہ سپدان زِ شہناز رشید چھا گۅڈہ بہ حثیت قاری غالبہ سندس طرزس نکھہ ووتمت تہ پتہ کتھ حدس تام چھ امۍ یہ طرز پننس ذہنی آب و ہواہس سٍتۍ ہم آہنگ کوٚرمت۔یمن دۅنونۍ سوالن ہندجواب ہیکہ شہناز رشیدنۍ شاعری یٲژ فراہم کٔرتھ۔

چناچہ شہنازرشیدنس کلامس منز چھٮہ نہ اسہِ امہ لحاظہ مشکل پسندی نظرِ گژھان زِ نہ چھہ یہ فارسی آ میز تہ نہ چھٮہ اتھ منز زبانۍ ہنز کانہہ پیچیدگی۔حد چھہ یہ زِ شہنازنس کلامس منز چھٮہ اضافتہ واجنہِ کژتام ترکیبے نظرِ گژھان۔اتھ سلسلس منز چھٮہ محمدیوسف ٹینگ سنز یہ کتھ بر حق زِ شہناز رشیدنۍ زبان چھٮہ "تتھ حدس تام دۅہ دِشچ خصلتھ تہ پرزنتھ تھاوان زنتہِ چھہِ اسۍ یہ زٲنہ کدل وۅکھلۍ تران تران بوزان "۔گویا کہ شہنازنۍ زبان چھٮہ روز مرہ ہچ زبان تہ امہ لحاظہ چھہ شہناز رشید میرس پتہ پتہ پکان تہ فارسی آمیز زبان نہ ورتاونہ کنۍ چھہ نہ شہناز رشید غالبنہ مشکل پسندی ہنز وتھ اپناوان۔مگر میانہ خیالہ چھٮہ یہے 'زٲنہ کدلۍ زبان'غالبس تہ شہنازس درمیان اشتراکک سبب۔

[پٔرو باقی ہن پرنٹ ایڈیشن نیب 27 ہس منز]

چناچہ ابہام چھہ یا تہ علامژ ہندِ استعمالہ سٍتۍ پیدہ سپدان نتہ سوالہ سٍتۍ ۔ مثلاشہنازنس یتھ شعرس منز چھہ نہ بظاہر سوال مگر "کوت" لفظکۍ استعمالن چھٮہ اتھ منز استفہامی کیفیت پیدہ کٔرمژ۔

اکھ گداگر زِ رنیٲمت چھہ ہلم تام یمس
کوت مشکل چھہ تمس توٚملہ مۅچھٮن رٲچھ کرنۍ

بظاہر چھہ لفظ 'کوت' شعرس منز شدت پیدہ کرنہ خاطر ہ استعمال کرنہ آمت یعنی ہلمہ کہ رٕننہ کنۍ چھٮہ توٚملہ مۅچھٮن رٲچھ کرنۍ سٮٹھاہ مشکل۔ وۅنۍ اگر یۅہے لفظ استفہام انکاری کس معنیس منز نمون تیلہ چھہ سوال وۅتھان زِ تس چھا توٚملہ مۅچھٮن رٲچھ کرنۍ مشکل تہ سوالہ کہ متنہ منزے چھہ انکارن معنہِ تہِ نیران زِ ہلم رٕننہ باوجود تہِ چھٮہ نہ تمس توٚملہ مۅچھٮن رٲچھ کرنۍ مشکل۔ ہلم تہ توٚملہ مۅٹھ چھٮہ علامژ۔ تۅملہ مۅٹھ اگر سرمایچ علامت مانو تیلہ چھہ معنہِ زِ سرما یس رٲچھ کرنۍ چھٮہ مشکل تہ گدا گر سندِ خاطرہ چھہ نہ یُتھ کانہہ مشکل تہ یتھہ کنۍ چھہ یہ توکلک مضمون بنان۔ وۅنۍ اگر 'کوت'شدتہ کس معنیس منز نمون تیلہ چھہ یہ نارسایی ہند مضمون ۔وچھتو وۅنۍ یم کینہہ شعر یہند استفہام نوٮن نوٮن تہ مخالف معنین زایت چھہ دوان۔

[پٔرو باقی ہن پرنٹ ایڈیشن نیب 27 ہس منز]