June 2012| جون 2012
 

 

غزلہ کٮن شعرن ہنز منتشر خیالی چھہ ردیف اکھ ضبط
تہ ربط عطا کران


رازس سیتۍ اکھ کتھ باتھ



نیب: یوٚدوے ژٮہ ردیف ورٲے تہِ غزل ونۍ متۍ چھِتھ مگر چانۍ ردیف والۍ غزل کھتۍ علمن ۔ چانٮن غزلن پٮٹھ لٲج واریاہو شاعرو مشق کرنۍ ۔ اکھ بوٚڈ وجہ اوس نوۍ، زیٹھۍ تہ دلچسپ ردیف۔ ردیف کوتاہ ضروری چھہ غزلس منز ؟ ییلہ قافیہ تہ ردیف غزلس منز یکوٹہ ورتاونہ یوان چھہِ ، غزلک موڈ چھہ ہیرہ پٮٹھہ بۅن تام برقرار روزان مگر اسۍ چھہِ وچھان زِ شعر چھہِ زن گنڈِتھ فارمولاہن منز تبدیل گژھان۔ اتھ سلسلس منزکیا چھہ چون خیال ؟ اتھ پٮٹھ کرتہ کھل کے کتھ؟

راز:پرانہِ زمانہ پٮٹھے، ییلہ انسانس پیوٚو خیال زِ روزنہ باپتھ گژھہِ مکانہ بناونہ یُن۔ تمۍ بنو و یتھے تیتھے مکانہ۔ طاق تہ طاقچہ بنٲون ضرورتاً۔ مگر یوت یوت زمانہ برونہہ پوٚک تیوت تیوت گوٚو انسانہ سنزن ضروژن منز اضافہ تہ طاقچ آیہ یمہ ضرورژ پورہ کرنہ باپتھ نوِ نوِ آیہ بناونہ۔ یمن آیہ بیک وق سجاوٹچ کٲم تہِ ہٮنہ۔ بالکل سپد مشرقی شاعری منز یا غزلس منز تہِ ردیفس ستۍ یۅہے معاملہ۔ ردیف چھہ غزلہ باپتھ ضروری یوٚدوے غیر مردف غزل تہِ لٮکھنہ چھہ یوان۔ اہم تہ بڈۍ شاعر تہِ چھہ غزلس منز ردیف تخلیقی ضروژن تحت ورتاوان۔ یہ چھٮہ الگ کتھ زِ ردیف چھہ غزلس منز سجاوٹچ کام تہِ دوان۔ یا شعرن منز اکھ مزید لطف یا سرورتہِ پیدہ کران۔
اہم تہ بڈٮن شاعرن ہندۍ شعر چھہِ ردیف کنی سپاٹ بیان بننہ بجایہ اکھ استعارہ بنان۔ غزلہ کٮن شعرن ہنز منتشر خیالی چھہ ردیف اکھ ضبط تہ ربط عطا کران۔ غزلک شعر چھہ تیلی اسہِ متاثر کران ییلہ اتھ منز استعار چ تۅژھ آسان چھٮہ۔ یہ تۅژھ چھہ شعرس منز ردیفے پیدہ کران بلکہ چھہ دۅن مصرعن منز پھہلتھ اکھ استعارہ یا زہ ترٮہ استعارہ ردیفہ ستی اکھ کُنے توثر وۅتلاوان۔ ازۍکس ڈکشنس منز کرو کتھ تہ تیلہ چھہ ردیف اکس شعرس explosiveتہِ بناوان تہ پانے چھہ detonatorتہِ بنان۔ مثالے۔
رنگ بالۍ ڈوٚلم تازہ گُلس
یہ چھہ اکھ سپاٹ بیانstatement۔یہ چھہ نہ ژیونمت تجربہ کینہہ۔ یا
سنگ کالۍ ژوٚلم رازہ بلس
یہ تہِ چھہ چھرا بیان۔ مصرعس منز باونہ آمژ شٮچھ چھٮہ محض اکھ شٮچھ یتھ ستۍ نہ کٲنسی کانہہ دلچسپی ہیکہِ پیدہ گژِھتھ۔ یم دۅشوے مصرعہ چھہِ قافیہ بند تہ وزنہ لحاظہ اکھ اکس برابر تہِ۔ دۅن مصرعن منز چھہِ زہ الگ الگ بیان۔ یم دۅشوے مصرعہ چھہِ دو لخت۔ یمن دۅن مصرعن منز نہ چھہ کانہہ ظاہری ربط تہ نہ کانہہ معنوی ربط۔ وۅنۍ ہرگاہ یمن دۅن مصرعن منز ردیفک اضافہ کروتہ لیکھوکھ یتھہ کنۍ۔
رنگ بالۍ ڈوٚلم تازہ گلس سے مٮہ دلس کان
سنگ کالۍ ژوٚلم رازہ بلس سے مٮہ دلس کان
وۅنۍ بنیوو یہ مطلع تہ ردیفن کوٚر دۅن الگ الگ مصرعن منز اکھ بامعنی ربط پیدہ تہ دۅن مختلف تہ معمولی مصرعن منز گوٚو استعارک ہیو زوزٮتہ پیدہ۔
اہم تہ بوٚڈ شاعر چھہ ضرورتاً تہ تخلیقی جبرس تحت ردیف ورتاوان۔ تمس چھہ ردیف تگان بناوُن ییلہ زن معمولی تہ تقلید کرن والۍ شاعر چھہِ محض سجاوٹہ باپتھ ردیف ورتاوان۔ تہند ردیف چھہ نہ استعارک رنگ روپ ہٮکان رٹِتھ۔ تہندٮن غزلن منز چھہِ شعرفارمولاہن منز زنتہ گنڈتھ باسان۔

نیب:چانہِ غزلک اکھ امتیاز چھہ صوفیانہ خیال وننہ یوان۔ یہے چھٮہ یمن ہنز کمزوری تہِ وننہ یوان۔ سانٮن صوفی شاعرن ہنزِ شاعری منز کوتاہ چھہ باسان زِ شاعرن چھہ سوٚرمت ؟ یہ کتھہ پاٹھۍ ییہِ وننہ زِ کانسہِ چھا صوفی تجربہ سٔرتھ بیان کوٚرمت کنہ سرنے؟ پننہِ شاعری ہنزِ روشنی منز کرتہ اتھ پٮٹھ صراحت سان کتھ؟

راز:یہ کم چھہِ ونان؟ اسہِ کم سنجیدہ نقاد چھہِ اندۍ پکۍ ؟یمن تہِ قلم اتھس منز چھہ تم چھہِ اتھ پننٮن مفادن برونہہ پکناونہ باپتھ تہ یہنز رٲچھ راوٹھ کرنہ باپتھ استعمال کران۔ میانہ غزلک امتیاز چھہ نہ صوفیانہ خیال بلکہ میون اسرارۍ طرزِ فکر ۔اتھ چھہ بوٚڈ وجہ یہِ زِ مٮہ چھٮہ اکھ باگہِ بٔرژ روایت ڈکھِس۔ بڈۍ تہ اہم شاعر چھہِ نہ ہوہس منز معلق روزِتھ بڈۍ تہ اہم بنان بلکہ چھہِ تم روایژ ہنزِ ہانکلہِ منز اکہِ نتہ بییہِ رنگہ وٲٹِتھ آسان تم چھہِ اتھ ہانکلہِ توسیع کراں۔ تم چھہِ ہانکلہِ منز جوڑتھ آسنہ باوجود پتھ کالہ کھۅتہ تازہ دم، سٲدروار تہ مختلف باسان۔
مٮہ چھٮہ ہتہ واد ؤرین ہنز صوفی روایت ڈکھِس۔ بہ گژھہ یُن مۅلناونہ ،پرزناونہ تہ پرکھاونہ اتھۍ پس منظرس منز۔ تصوفس متعلق چھٮہ شاعری منز زہ کتھہ اہم۔ اکھ گے سۅ شاعری یتھ منز تصوفکۍ مضمون چھہِ آمتۍ گنڈنہ۔ شاعرچھا پانہ صوفی کِنہ نہ یا تمۍ سند طرزِ فکر چھا صوفیانہ کِنہ نہ تہِ چھہ نہ ضروری۔ بیاکھ گے سۅ شاعری یتھ منز نہ تصوفکۍ مضمون بالکل نظری چھہِ گژھان مگر یتھ منز اسرار ہوۍ ژھایہ گتۍ چھہِ کران۔ یہ شاعری چھٮہ تمو شاعرو دسۍ تخلیق سپدان یمن زندگی تہ کاینات کٮن چیزن ہند ظاہری روپ کم پہن متاثر چھہ کران تہ یم شاعر چھہِ زندگی تہ کاینات کٮن چیزن ہندس باطنی پہلووس ستۍ زیادہ دلچسپی تھاوان۔ یم گے تم یم کاینات کس خالقس تام واتنہ باپتھ مخلوقاتن ہندس باطنی پہلووس پٮٹھ غور چھہِ کران۔ یمے گے تم یمن اسرارۍ طرزِ فکر باگہِ چھہ آمت آسا ن۔ سانۍ تمام صوفی شاعرما آسہ ہن حقیقی زندگی منز صوفی مگر شاعری منز چھہِ تم صرف اسرارۍ تہ رومانی طرز فکر تھون والٮن شاعرن ہندۍ پاٹھۍ نمودار سپدان۔ سانۍ صوفی شاعر چھہِ نہ ہرگز تہِ فارسی یا عربی صوفی شاعرن ہوۍ باسان۔ تہنز شاعری چھٮہ نہ ہرگز تہِ نصیحت آموز یا تم چھہِ نہ حکایتن ہندس لباسس منز تصوفکۍ یا اسلامکۍ نکتہ باوان یا وٮژھناوان۔ اوے چھُس بہ ونان زِ اسۍ چھہِ یمن عظیم شاعرن صوفی شاعر ؤنتھ محدود کران۔ سانۍ یم شاعر یمن عام پاٹھۍ صوفی شاعرچھہِ ونان چھہِ عظمتہ والۍ شاعر، یمو زندگی ہندۍ سنۍ تہ وۅگنۍ وچھِتھ رنگا رنگ تجربہ حاصل کرۍ تہ تمنے تجربن ہنز باوتھ کٔرکھ شاعری منز۔
شنۍیا گژھۍ تھے اوس میون اولُے؍ امۍ عشقہ نارن زولیے
اتھ منز کُس تصوف چھہ؟ اتھ منز چھٮہ انسانی فکر ہندِ تمہِ سفرچ دردناک داستان یمیک اند گۅڈہ گۅڈ ہ شنیا گژھتھے چھہ باسان تہ پتہ باسان زِ یہ چھہ محض اکھ پڑاو۔ وۅں گوٚو یمن شاعرن ہنزِ فکرِ منز چھٮہ اکھ پژھ تہ اخلاص ٲڈرِتھ۔ اوے چھٮہ یہ فکر پراسرار باسان۔ چونکہ پژھ تہ اخلاص چھہِ نہ محض سوچنہ ستۍ مضبوطی لبان بلکہ سرنہ ستۍ، سرنہ تہ ژیننہ پتہ یۅس فکر جہار ہ چھٮہ لبان سۅ چھٮہ دٮماغن ستۍ ستۍ دلن تہِ متاثر کران۔ سانۍ صوفی شاعری تہِ چھٮہ براہِ راست دلن پٮٹھ اثر کران تکیازِ یمو شاعروچھہِ سرۍ متۍ تہ ژ ینۍ متۍ تجربہ بیان کرۍ متۍ۔ رود یہ سوال ز تموچھا صوفی تجربہ سرِتھ بیان کرۍمتۍ کنہ سرہ نے؟ جواب چھہ زِ تمو چھہ سوٚرمتے سوٚرمت۔ فارسی تہ عربی شاعرو چھہِ صوفی خیال صوفیتکۍ نکتہ، شریعتکۍ تہ طریقتکۍ مسایل حکایتن ہندس لباسس منز یا تمثیلن ہندِ ذریعہ باوۍ متۍ۔ سانیو صوفی شاعرو چھہ پنن گدرُن بوومت۔ عربی تہ فارسی شاعرو چھہ خدایہ سندِ آسنک ، تمۍ سندِ بجرک ذکر کوٚرمت۔ ییلہ زن سانیو صوفی شاعرو چھہ خدایہ سندِ آسنک تہ تمۍ سندِ بجرک ہیبت پننس دلس منز محسوس کوٚرمت۔ یم کیفیژہ تہ احساس اتھ ہیبتس منز وۅتلیمژہ چھٮہ تمنے ہند اظہار چھہ تمو شاعری منز کوٚرمت۔ خداے چھہ رحمان تہِ رحیم تہِ تہ قہار تہِ ۔سہ چھہ دنہ وول تہِ تہ نِنہ وول تہِ۔ سانیو شاعرو چھہ خدایہ سندٮن مختلف صفاتی ناون ہند اثر قبول کٔرتھ مختلف تہ متضاد تجربہ حاصل کرمتۍ یمن ہند اظہار تمو شاعری منز کوٚرمت چھہ۔ عربی فارسی صوفی شاعری پٔرتھ چھہ تصوفس متعلق سٲنس علمس منز اضافہ گژھان ، ییلہ زن کاشر صوفی شاعری پٔرتھ چھہ سانٮن احساسن تہ جذبن وتش ہیو لگان۔ اسہِ منز تہِ چھٮہ پراسرار کیفیژ وۅتلان یا دوٚیمٮن لفظن منز اسۍ تہِ چھہِ تہندس تجربس منز شریک سپدان۔
ہرگاہ پژھ مضبوط تہ دٔر آسہِ تہ پژھہِ ہنز بنیاد آسہِ اخلاصس پٮٹھ قایم لازماً چھہ انسانس اندر اکھ اسرارۍ طرز فکر پیدہ گژھان۔ ضروری چھہ نہ امہِ اسرارۍ طرز فکرِ ہندس نتیجس منز یۅس شاعری پیدہ گژھہِ سۅ کرِ پرن والۍ سندِس علمس منز کانہہ اضافہ۔ اہم تہ بٔڈشاعری چھٮہ نہ علمس منز اضافہ کران بلکہ چھٮہ پرن والۍ سندۍ ساری حٮس آوراوان تہ تمس ذہنی تہ روحانی طور گیر تہ گرفتار کران یُتھ زن سہ مقدور تہ وا تنیارہ مطابق شاعر سندِس تتھۍ تجربس منز شریک سپدِ یمیک اظہار شاعری منز کرنہ آسہِ آمت۔
سانٮن صوفی شاعرن منز چھہ میر تقی میر سند ہیو دود، ٹھہراو تہ بے قراری تہ بییہِ احساسن تہ جذبن وتش دنہ وول اسرارۍ لہجہ۔ میرس چھہ نہ کانہہ صوفی شاعر ونان۔ اسۍ کیازِ ونان شمس فقیرس ، رحمان ڈارس، صمد میرس تہ وہاب کھارس صوفی شاعر؟
وۅنۍ یوٚتام میانہ شاعری ہند تعلق چھہ بہ تہِ چھس اکس حدس تام سری لہجک شاعرے۔ میانہ سوچنک طرز تہِ چھہ اسرارۍ۔ دۅیہ قسمکۍ اسرار چھہِ انسانی عقلہِ پریشان کران۔ اکھ شیطانی اسرار تہ دوٚیم رحمانی اسرار۔ یعنی ژھوٚٹۍپاٹھۍ بازۍ گر سند طلسم تہِ چھہ عقلہِ پریشان کران تہ فقیرن تہ قلندرن ہنز کرامت تہِ۔ میانہ شاعری منز چھہِ تم اسرار ژھایہ گتۍ کران یم فقیرن تہ بادم قلندرن ستۍ منسوب چھہِ تہ یمن اسرارن ہنز بنیاد چھٮہ پژھ تہ اخلاص، جود تہ طلسم نہ کینہہ۔ میانہ شاعری ہند انداز تہ انہار چھہ نہ رومانی یا عشقیہ یتھہ کنۍ سانٮن صوفی شاعرن ہند چھہ۔ تمن تہ مٮہ منز چھٮہ صرف اسلوب بیانچ فرق تہ بس۔ تم تہِ چھہِ رحمانی اسرارن متۍ گامتۍ تہ بہ تہِ چھس اتھۍ متۍ گوٚمت۔

نیب: غزل چھہ کاشرس منز ونہِ مقبول ترین صنف۔ اتھ کیا وجہ چھہ۔ نظمہِ منز ییژ آزادی ٲستھ کیازِ چھہِ نوجوان ونہِ غزلس کُن لاران؟

راز: غزلس کیا چھٮہ ونہِ وٲنسے کاشرس منز؟ غزل کوٚر پننٮن کۅٹھٮن پٮٹھ صحیح معنیس منز کھڑارسول میرن، اسد میرن ، مہجورن، آزادن تہ حقانی ین۔ امین کاملن دیت غزلس استحکام تہ اسۍ ہوۍ نابکار چھِس تلان ہرتر۔ ہرگاہ نہ یم پٮٹھہ کنہِ درج شاعر آسہ ہن غزل آسہِ ہے تتی یتٮن محمود گامی سندِ پٮٹھہ وازہ محمودس تام ٲس۔ کاشرس منز چھہِ غزل صنفکۍ ساری امکانات اتۍ۔ اتھ منز چھٮہ بٔڈ تہ اہم شاعری ممکن۔ غزل چھٮہ سانہِ تہذیبچ علامت۔ ییلہ بہ تہذیبچ کتھ چھس کران بہ چھس اتھ منز زبان، رسم رواج علاوہ مذہب، عقیدہ تہ پژھ تہِ شامل زانان۔
سون تہذیب چھہ نہ دنیاوی لہلاوس، رنگ تہ روپس یا کاینات کٮن ظاہری پہلوون زیادہ اہمیت دوان۔ سون تہذیب چھہ نٮبرہ پٮٹھہ اندر کُن سفر کرنک تلقین کران۔ گوٚو داخلیت پسندی چھٮہ سانہ تہذیبک جوہر۔ یہے داخلیت پسندی چھٮہ غزل صنفس براہ۔ اوے چھٮہ غزل سانہِ باپتھ ونہِ تہِ دلکشی تھاوان۔ نظم چھٮہ مغربی تہذیبک مظہر۔ نظم ہیکہِ نہ داخلیت پسندی ہند بار تُلتھ۔ مغربس منز چھہ اندرہ پٮٹھہ نٮبر کُن سفر ونہِ تہِ جاری۔ لہذا چھٮہ تمن خارجیت پسند صنف (نظم) براہ آمژ ۔ تتہِ چھٮہ مینفٮسٹو manifestoجاری کٔرتھ شاعری یوان کرنہ۔ تتہِ چھٮہ تحریکن تابیا روزِتھ تہِ شاعری یوان کرنہ۔ تتہِ کس تہ مشرقی ماحولس تہ تہذیبس چھٮہ زمینچ تہ آسمانچ فرق۔
انسان چھہ زمینس تہ آسمانن منز قید۔ کوشش کٔرتھ تہِ ہیکہِ نہ یہ یمو حدو منزہ نیرِتھ۔ مغربی ماحولس منز پروردہ انسان چھہ یمو حدو منز تہِ نیرنچ لاحاصل کوشش کران۔ اوے چھٮن شاعری ہندِ باپتھ تہِ نظم ہش آزاد صنف منتخب کرمژ۔ زمینو تہ آسمانو منزہ چھہِ تمے نٮبر ہٮکاں نیرِتھ یم زمینن تہ آسمانن ہنز پابندی عقید تاً قبول تہِ چھہِ کران۔ غزلہ چٮن پابندین ہنز پاسداری کرۍتھے چھہِ مشرقی تہذیبکۍ پروردہ زمینہ کیو تہ آسمان کیو حدو نٮبر درامتۍ۔
شنۍیا گژھۍ تھے اوس میون اولے
امۍ عشقہ نارن زولیے

نیب: ازیک غزل کورکُن چھہ گژھان؟ نوٮن شاعرن منز کٲژا وۅمید چھٮہ ژٮہ نظرِ گژھان؟

راز: امین کاملن یتٮن غزل تروو مٮہ تل تتۍنے تہ پکنوم برونہہ کُن تہ ہاوۍ مس نوۍ طرفات۔ وۅنۍ یی کانہہ شاعرا تہ سہ ہاوٮس بالکل نوۍ طرفات۔ فی الحال چھہِ مٮہ اندۍ پکۍ نقال تہ تقلید کرن والۍ زیادہ۔ غزلک صنف چھہ زبردست تخلیقی صلاحیژن ہند تقاضہ کران۔ آسہِ کانہہ وق زِ کانہہ شاعر گژھہِ پیدہ یمس منز امین کامل تہ رفیق راز نہِ کھۅتہ زیادہ تخلیقی صلاحیژ آسن تہ سہ نی غزلس بییہِ ہن تھزرن کُن۔
ونکٮن چھہِ برونہمہِ کھۅتہ زیادہ شاعر غزلس کُن مایل مگر اکثر چھہِ عروض ناشناس۔ غزل لیکھنہ باپت چھٮہ عروض شناسی ضروری۔

نیب:چانہ شاعری منز کیا چیز چھہ سہ یتھ نہ ونہِ چون پرن وول یا نقاد ووتمت چھہ؟

راز: نقاد آسہِ ہے تہ واتہِ ہے۔ ویسے غزلہ باپت گژھہِ غزلہ خاطر موزون تہ مناسب لفظت آسُن۔ قلی قطب شاہ سندِ پٮٹھہ میرس تام یم شاعر آیہ تمو کوٚر غزلک اکھ مخصوص لفظت تیار۔ میر تہ غالب آیہ تہ تمو کوٚر یۅہے لفظت تخلیقی تہ احساسی سطحس پٮٹھ کامیابی سان استعمال۔ کاشر زبان چھٮہ نہ تیژ خۅش نصیب۔ امین کامل سندِ پٮٹھہ ہیوٚتن غزلک لفظت تیار سپدُن۔ سٲنس دورس منز چھہ وژن لٮکھنہ باپت اکھ باگہِ بوٚرت لفظت موجود۔ مگر کہنی چھہ نہ اوکُن مایل سپدان۔وژنک لفظت نے کاشرس منز تیار آسہ ہے ، صمد میر ، احد زرگر، مہجور تہ آزاد مالبہ ہن وہمہِ صدی منز سہ قدیس تمو وژن لیکھِتھ پروو۔ وچھوے تہ بہ تہِ چھس کاشرِ غزلہ باپت لفظتے تیار کران۔ اتھ سلسلس منز چھس وژنک لفظت تہِ پیش نظر تھاوان یمہِ نش واریاہ استفادہ تہِ چھس کران تہ امی لفظتیک کورہ نقل چھہِ میانۍ ہم عصر کران۔ اگر کانہہ نقاد کاشرس منز چھہ سہ چھہ نہ ونہِ یمنے نکتن ووتمت۔

نیب: شاعری کاژا چھٮہ لفظن ہند کھیل تہ کٲژا معنی آفرینی؟ چون غزل تہ چانہِ غزلہ علاوہ کاشر غزل کتہِ نس چھ امہِ لحاظہ؟

راز: معنی آفرینی ہند عمل چھہ سپدان کینژھا شاعر سندس ذہنس منز، کینژھا پرن والۍ سندس ذہنس منز۔ شاعری چھٮہ بے شک لفظن منز آسان مگر معنی چھہ نہ لفظن منز آسان۔ معنی چھہ پرن والۍ سندس ذہنس منز آسان۔ ییتۍ پرن والۍ تیتۍ معنی۔ یتھ دورس منز شاعری پرنہ یی معنی گژھہِ تمی دورکس پوٚت منظرس منز ظاہر۔
میون غزل تہ میانہ غزلہ علاوہ کتٮن چھہ کاشر غزل؟ امہِ سوالک جواب میلہِ ہیرۍ مٮن جوابن منزے۔